Breaking NewsEducationتازہ ترین

زرعی یونیورسٹی ملتان : بائیو فورٹیفائیڈ گندم کی تجارتی بنیادوں پر ترویج

ایم این ایس زرعی یونیورسٹی میں ادارہ آگاہی کے زیراہتمام پاکستان میں بائیو فورٹیفائیڈ گندم کی تجارتی بنیادوں پر ترویج کے پروگرام کے تحت ملٹی سٹیک ہولڈرز پلیٹ فارم کی فارمیشن کے حوالے سے سیمینار کا انعقاد کیا گیا۔

منور حسین(ہارویسٹ پلس پاکستان)نے کہا کہ زنک والی گندم کی کاشت کو فروغ دینے اور زمین گندم کی فراہمی کو بڑھانے کے لیے میڈیا کا کردار بہت اہم ہے۔

آج دنیا میں میڈیا ہماری روزمرہ کی ضروریات کی طرح ضروری ہو گیا ہے۔آج کا میڈیا رائے عامہ کی تشکیل اور معاشرے کی مضبوطی میں شاندار کردار ادا کر رہا ہے۔

کسانوں تک زرعی سفارشات پہنچانے سے لے کر جدید ٹیکنالوجی کی آگاہی تک میڈیا اپنا احسن طریقے سے کردار ادا کر رہا ہے۔

مزید کہ کس طرح میڈیا کے ذریعے کسانوں کو زنک گندم کی نئی اقسام کی کاشت پر زور دیا جا سکتا ہے تاکہ ملک میں بڑھتی ہوئی زنک کی کمی پر قابو پایا جاسکے۔

ڈاکٹر مختار احمد نے کہا کہ انسانی جسم میں زنک کی ترکیب کرنے کی صلاحیت نہیں ہے ،لہذا ضروری ہے کہ اسے خوراک کے ذریعے حاصل کیا جائے۔زنک ایک ایسا عمل ہے جو ہمارے جسم میں کئی اہم کام سرانجام دیتاہے۔جن افراد میں قوت مدافعت کو مضبوط بنانا، زخموں کو مندمل کرنا،سیلز پروڈکشن کرنا،ڈی این اے اور پروٹین کی تشکیل کرنا،جسم پر عمر کے اثرات کو محسوس کرنا وغیرہ شامل ہیں۔

علاوہ ازیں زنک کا ہمارے ذائقے اور سونگہنے کی حس اور فرٹیلٹی سے بھی گہرا تعلق ہے۔18 فیصد لڑکے لڑکیوں میں زنک کی کمی پائی جاتی ہے۔

چیئرمین شعبہ فور سائنس ایس ڈاکٹر عمر فاروق نے کہا کہ میڈیا آج کل بہت سے زراعت میں اہم کردار ادا کر رہا ہے۔ایک بٹن کے چند کلکس کے بعد معلومات پھیلائی جا سکتی ہیں

۔ڈاکٹر جاوید اقبال نے امید ظاہر کی کہ نئی اقسام موجودہ گندم کے جینیاتی پول میں تنوع پیدا کریں گی اور پیداواری عمل کو بیدار بنانے میں مدد کریں گی جن کی وجہ سے ملک بھر میں زرعی پیداوار کو فروغ ملے گا۔

ڈاکٹر حماد ندیم نے کہا کہ پاکستان میں زنک کی کمی کو دور کرنے کے لئے بائیو فورٹیفائیڈ گندم کی اقسام کی اہمیت کے بارے میں لوگوں تک آگاہی دینے میں میڈیا کا کردار بہت اہم ہے

۔بائیو فورٹیفائیڈ گندم کی اقسام کو مقبول بنانے اور کسانوں کے لیے تصدیق شدہ بیج کی دستیابی میں اضافہ کرنے والی پالیسیوں کی وکالت کے لئے میڈیا کو شامل کریں گے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں