Breaking NewsEducationتازہ ترین

تعلیمی بورڈ ملتان میں طلبہ کے پریکٹیکل کے نمبرز بڑھانے وکم کرنے کے دھندے کا انکشاف

اہم تعلیمی اداروں و اکیڈمیو ں میں طلبا وطالبات کی پوزیشنیں لینے کی دوڑ لگی ہوئی ہے، طلباوطالبات کی بورڈ میں پوزیشنوں کے نام پر کاروبار چمکاتے ہیں۔

اس سلسلے میں تعلیمی بورڈملتان میں ایک مافیا سرگرم ہے، جو بڑے تعلیمی اداروں واکیڈمیوں سے لاکھوں روپے لے کر جائز و ناجائز طریقوں سے ان کے طلبہ کی میٹرک و انٹر میڈیٹ میں پوزیشنیں دلواتا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ امتحانی سنٹرز بھی فروخت ہوتے ہیں‘ وہاں عملہ بھی من مرضی کا لگایا جاتاہے‘ امتحان میں مخصوص تعلیمی اداروں کے طلبہ کی کامیابی کے لئے ناجائز طریقے اختیار کئے جاتے ہیں، اور انتہائی احتیاط سے یہ کام کیا جاتا ہے۔
تعلیمی بورڈ حکام میرٹ کی رٹ لگاتے ہیں لیکن حقیقت اس کے برعکس ہوتی ہے۔

پریکٹیکل کے امتحانی سنٹرز بھی خریدے جاتے ہیں‘سنٹر سپرنٹنڈنٹس کے ساتھ معاملات طے کرلئے جاتے ہیں۔
سنٹر سپرنٹنڈنٹس کو خاطر خواہ رشوت دی
جاتی ہے‘ پک اینڈ ڈراپ کیلئے گاڑیاں ڈرائیورز سمیت بھجوا ئی جاتی ہیں۔

مخصوص طلبا وطالبات کے پریکٹیکل میں پورے نمبرز لگوائے جاتے ہیں‘ یہ افسوسناک امر ہے کہ اگر کسی عام طالب علم یا طالبہ کے نہم یا فرسٹ ائر میں بہت اچھے مارکس آئیں اور لگ رہا ہوکہ وہ تعلیمی بورڈ میں ٹاپ کرسکتے ہیں تو ایسے طلباو طالبات کو نشانے پر لے لیا جاتا ہے، اور میٹرک و سیکنڈ ائیر میں ان کے پریکٹیکل کے نمبرزکم کردئیے جاتے ہیں تاکہ وہ ٹاپ نہ کرسکیں اور من پسند تعلیمی ادارے کے مخصوص طالب علم وطالبہ کی ہی پوزیشن آئے۔

کبیروالا کی ایک یتیم طالبہ نے نہم میں 505 میں سے 504 مارکس لئے تو اس کے نمبرز میٹرک پریکٹیکل میں کم کرکے اسے پوزیشن سے محروم کردیا گیا۔

اس کے علاوہ ٹاپ پوزیشن کے قریب دیگرطلباوطالبات کے ساتھ بھی ایسے ہی کیا گیا اور پریکٹیکل میں ان کے نمبرز کم کرکے انہیں بورڈ کی پوزیشن سے محروم
کردیا گیا۔

تعلیمی حلقوں نے صورتحال پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ پنجاب و سیکرٹری ایچ ای ڈی پنجاب سے مطالبہ کیاہے کہ صورتحال کا سخت نوٹس لیاجائے اور اس بارے میں خفیہ تحقیقات بھی کراکر ایکشن لیاجائے۔

اس بارے میں رابطہ کرنے پر چیئرمین تعلیمی بورڈ حافظ محمد قاسم نے موقف میں کہاکہ ان سے پہلے جو کچھ بھی ہوتا رہا ہے تو وہ اس کے ذمہ دار نہیں ہیں ،لیکن انہوں نے جب سے چارج لیا ہے تو اس کے بعد سے ایسا کچھ نہیں ہورہا‘ وہ امتحانی سپرنٹنڈنٹس و عملے کی ڈیوٹیاں تک اپنی نگرانی میں لگوا رہے ہیں اور معاملات کا بغور جائزہ لے رہے ہیں‘ تمام کام میرٹ پر کئے جارہے ہیں۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں