Breaking NewsNationalتازہ ترین

جلالپور حادثہ: ابتدائی تحقیقات کا آغاز

ڈپٹی کمشنر ملتان طاہر وٹو نے کہا ہے کہ جلالپور پیر والہ انٹر چینج پر بس اور آئل ٹینکر حادثے کی ابتدائی تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے، حادثے کی اطلاع ملتے ہی ریسکیو اور متعلقہ اداروں نے فوری موقع پر پہنچ کر امدادی کارروائیاں شروع کیں، تاہم شدید آگ کے باعث 20 قیمتی جانوں کا ضیاع ہوا۔

انہوں نے کہا کہ تمام میتوں کو نشتر ہسپتال پہنچا دیا گیا ہے جہاں ڈی این اے ٹیسٹ کے ذریعے انکی شناخت کا عمل بھی شروع کردیا گیا ہے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے گزشتہ روز جلالپور انٹر چینج پر جائے حادثہ کا دورہ کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سی پی او خرم شہزاد حیدر بھی انکے ہمراہ تھے ۔

ڈپٹی کمشنر طاہر وٹو جائے حادثے پر فوری پہنچ گئے ، اور اپنی نگرانی میں بھرپور ریسکیو آپریشن کرایا۔

ڈپٹی کمشنر طاہر وٹو نے کہا کہ حادتے کے شدید زخمیوں کو نشتر ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں انکو بھرپور علاج و معالجہ کی سہولت فراہم کی جارہی ہے ۔

انہوں نے کہا کہ المناک حادتے میں 20 افراد جاں بحق اور 6 شدید زخمی ہوئے، حادثے کے فوری بعد نشتر ہسپتال اور جلالپور کے طبی مراکز پر ایمرجنسی نافذ کردی گئی اور 6 گھنٹے کے آپریشن کے بعد جائے وقوعہ کو کلئیر کرکے موٹر وے بھی کھول دی گئی ہے۔

دریں اثناء ڈپٹی کمشنر طاہر وٹو نے نشتر ہسپتال میں حادثے کے زخمیوں کی عیادت کی، اور نشتر ہسپتال ایمرجنسی وارڈ کا دورہ کیا۔

ڈپٹی کمشنر اور سی پی او نے جلالپور حادثے کے زخمیوں سے ملاقات کی ، اور نشتر ہسپتال انتظامیہ کو بھرپور علاج و معالجہ کی ہدایت بھی جاری کی۔

ڈپٹی کمشنر طاہر وٹو نے بتایا کہ حکومت پنجاب نے حادثے کے زخمیوں کی بھرپور کفالت کی ہدایت کی ہے، جاں بحق مسافروں کی شناخت اور لواحقین کی تلاش کا سلسلہ شروع کردیا گیا ہے ۔

جبکہ لاشوں کی شناخت کیلئے ڈی این اے ٹیسٹ کا عمل شروع کردیا گیا ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں