Breaking NewsEducationتازہ ترین

اسلامی جمعیت طلباء نے زکریا یونیورسٹی کے وائس چانسلر سے مستعفی ہونے کا مطالبہ کردیا

ناظم اسلامی جمعیت طلبہ حارث بلوچ نے کہا ہے کہ جامعہ زکریا میں آئے روز طلبہ تنظیموں کے درمیان سر عام فائرنگ کا تبادلہ طلبہ میں خوف وہراس پیدا کر رہا ہے ، جو کہ تعلیمی درس گاہ کے لیے بہتر نہیں۔
افسوس اس بات کا ہے کہ ابھی تک یونیورسٹی انتظامیہ کی جانب سے کسی قسم کا ایکشن نہیں لیا گیا۔

روزانہ کی بنیاد پر آؤٹ سائڈرز یونیورسٹی کے اندر بغیر کسی پوچھ گچھ کے داخل ہوتے ہیں اور سر عام اسلحہ لے کر گھومتے ہیں۔۔مگر کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔ انتظامیہ خاموش تماشائی بن کر خواب خرگوش کے مزے لے رہی ہے۔ یونیورسٹی میں اسلحہ کلچر عام ہونے کی وجہ سے پہلے پہل تو صرف طلبہ میں خوف و ہراس پھیلا ہوا تھا۔ لیکن اب تو اساتذہ کو بھی یرغمال بنایا جا رہا ہے۔

پچھلے سال بھی یونیورسٹی میں دن دیہاڑے ایک طالب علم کی جان لے لی گئی مگر یونیورسٹی انتظامیہ کے کان پر جوں تک نہ رینگی۔ یونیورسٹی انتظامیہ اور وائس چانسلر ڈاکٹر منصور اکبر کنڈی معاملات کو کنٹرول کرنے میں مکمل طور پر ناکام ہو چکے ہیں۔

اسلامی جمعیت طلبہ جامعہ زکریا یونیورسٹی میں اسلحہ کلچر اور خوف و ہراس کی کیفیت کی بھرپور مذمت کرتی ہے ۔ اور انتظامیہ سے مطالبہ کرتی ہے کہ جلد از جلد ان معاملات کو کنٹرول کیا جائے ، اور زمہ دار عناصر کے خلاف سخت کاروائی کی جائے۔

اگر انتظامیہ اور وائس چانسلر معاملات کو حل کرنے میں کامیاب نہیں ہوتے تو اپنی نا اہلی کو قبول کرتے ہوئے عہدوں سے مستعفی ہو جائیں.

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں