Breaking NewsEducationتازہ ترین

کپاس کی زیادہ پیداوار کے حوالے سے آن لائن میٹنگ کا انعقاد

ایم این ایس زرعی یونیورسٹی ملتان اور حکومت پنجاب ایگریکلچر ڈیپارٹمنٹ کے تعاون سے کپاس کی زیادہ پیداوار کے حوالے سے آن لائن میٹنگ کا انعقاد کیاگیا۔

میٹنگ کا ایجنڈا کپاس کی پیداوار میں شامل تمام اسٹیک ہولڈرز کوان بورڈ اور کپاس اُگانے والے علاقوں میں مہم شروع کرنا تھا تا کہ کاشتکاروں کو کپاس سے متعلق مسائل کے حل میں مدد فراہم کی جاسکے اور تمام اسٹیک ہولڈرز مل کر محکمہ زراعت توسیع کو آؤٹ ریچ سرگرمیوں میں مدد فراہم کریں، اور مختلف علاقوں کے ماہرین کے ساتھ کام کر کے زرعی گریجوایٹس کو تجربہ فراہم کریں۔

آن لائن میٹنگ میں درج ذیل شرائط طے پائیں۔

01۔ ہر شرکت کرنے والی یونیورسٹی اور محکمہ زراعت دو دن کے اندراپنے فوکل پرسن کو نامزد کرے گی۔

02۔ ہر یونیورسٹی کپاس کے پورے موسم میں طلبا کی تعداد فراہم کرے گی اور طلباء کی اس فہرست کو تحصیل کے لحاظ سے ترتیب دے گی۔

03۔ محکمہ زراعت توسیع ہر تحصیل کے لئے طلباء کی تعداد کے لئے ان کی ضرورت فراہم کرے گا۔

04۔ کپاس کی مہم میں مصروف طلباء کو سمر انٹرنشپ سرٹیفیکیٹس سے نوازا جائے گا۔

05۔ طلباء کی نگرانی کے لئے جیو ٹیگینگ سسٹم استعمال کیا جائے گا۔

زرعی جامعہ ملتان اس نظام کو تعینات کرنے میں دوسرے محکموں اور یونیورسٹیز کی مدد کرے گا۔

06۔ طلباء کی ترتیب کے لئے ایکشن پلان آف ایگری ایکسٹینشن ڈیپارٹمنٹ کو وضع کرنے کی ضرورت ہے۔

07۔ کپاس کی اس مہم کو مزید مؤثر بنانے کے لئے نجی شعبہ (بیج اور کیڑے مار ادویات کی کمپنیوں) کے ساتھ مل کر چلیں گے۔

08۔ محکمہ زراعت طلبا کی نقل و حرکت کے لئے وسائل کی لاجسٹک لاگت کی دستیابی کے بارے میں مطلع کرے گا۔

آن لائن میٹنگ میں سیکرٹری زراعت پنجاب اسد رحمان گیلانی، سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب ثاقب علی عطیل، وائس چانسلر زرعی جامعہ پروفیسر ڈاکٹر آصف علی (تمغہ امتیاز)، ڈاکٹر اقرار احمد خان، ڈاکٹر اطہر محبوب، ایڈیشنل سیکرٹری زراعت جنوبی پنجاب امتیاز احمد وڑائچ، ڈاکٹر انجم علی بُٹر، ڈاکٹر حیدر کرار، ڈاکٹر شفت سعید، ڈاکٹر صغیر احمد، ڈاکٹر اقبال بندیشہ، ڈاکٹر حکومت علی، ڈٓکٹر اعجاز نور، محمود اختر رانا، ڈاکٹر اشفاق احمد، ڈاکٹر اشتیاق، ڈاکٹر عابد، ڈاکٹر زوالقرنین سمیت دیگر زرعی سائنسدانوں اور مختلف ریجنز کے ڈائریکٹرز نے شرکت کی۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں