Breaking NewsNationalتازہ ترین

پرُامن احتجاج آئینی حق ہے، لیکن ریاست کی اجازت ضروری ہے : سپریم کورٹ

سپریم کورٹ آف پاکستان نے احتجاج سے متعلق فیصلے میں قرار دیا ہے کہ پرامن احتجاج آئینی حق ہے، لیکن ریاست کی اجازت ضروری ہے، پرامن احتجاج کیلئےاجازت دےدینی چاہیے۔

سپریم کورٹ کا تحریری فیصلہ احتجاج سے متعلق اسلام آباد ہائیکورٹ بار کی درخواست پر سپریم کورٹ نے تحریری فیصلہ جاری کر دیا۔

12صفحات پرمشتمل فیصلہ چیف جسٹس عمر عطا بندیال نے تحریر کیا ہے۔

فیصلے کے مطابق آرٹیکل 15 اور 16کی روشنی میں پابندی نہ ہوتواحتجاج کی اجازت ہونی چاہیے ، کسی کوقانونی عذر کے بغیراحتجاج کےحق سےمحروم نہیں کیاجاسکتا جب کہ حکومتی اہلکارکوعوام کی زندگی میں رخنہ ڈالنے کاحق حاصل نہیں، حکومت کسی کی جان اور پراپرٹی کو نقصان نہیں پہنچا سکتی۔

عدالت نے واضح کیا کہ 25مئی کے فیصلے نے مشترکہ حقوق، عوام اور ریاست میں توازن پیدا کیا ، اعتبار کر کے اچھی نیت کیساتھ توازن پیدا کرنےکی کوشش کی، لیکن افسوس کی بات ہےہماری نیک نیتی کوعزت نہیں دی گئی۔ف

فیصلےمیں کہا گیا ہے کہ تحریک انصاف کی قیادت اور مظاہرین نےاحتجاج ختم کر دیا ہے، لانگ مارچ کےختم ہونے کے بعد تمام شاہراہوں کوکھول دیاگیا ، آزادانہ نقل و حرکت میں کوئی رکاوٹ نہیں ۔

عدالت درخواست دائر کرنے کا مقصد پورا ہو چکا ہے۔

سپریم کورٹ کے تحریری فیصلے میں جسٹس یحیٰی آفریدی کا اختلافی نوٹ بھی شامل ہے۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں