Breaking NewsEducationتازہ ترین

زرعی یونیورسٹی : کپاس کی پیدوار ی ٹیکنالوجی، کیڑے مکوڑوں اور بیماریوں سے بچاؤ کے حوالے ٹریننگ

ایم این ایس زرعی یونیورسٹی میں کپاس کی پیدوار ی ٹیکنالوجی، کیڑے مکوڑوں اور بیماریوں سے بچاؤ کے حوالے سے طلبا و طالبات کی ٹریننگ کا انعقاد کیا گیا۔

اس موقع پر وائس چانسلرپروفیسر ڈاکٹر آصف علی تمغہ امتیاز نے طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح میڈیکل کی تعلیم حاصل کرنے والے ہاؤس جاب کے بغیر ڈاکٹر نہیں بن سکتے ، اسی طرز پر ہم نے سمر انٹرنشپ پروگرام محکمہ زراعت توسیع کے ساتھ مل کر ترتیب دیا ہے۔
جس میں تمام طلبہ و طالبات گرمیوں کی چھٹیوں میں فیلڈ میں رہیں گے ، جس سے زمینداروں کی رہنمائی ہوگی اور آپ طلباء کو سیکھنے کا موقع ملے گا۔

انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ آپ کی فیلڈ کی کارکردگی ہمارے ادارے کی امیج بلڈنگ کے لیے بہت اہم ہے۔

اس موقع پر پروفیسر ڈاکٹر شفقت سعید ڈ ین کلیہ زراعت نے طلبہ وطالبات کو پروگرام کے بارے میں بریف کیا اور کہا کہ آپ نے زمینداروں کو زرعی زہر وں کے انسانی زندگیوں پر مضراثرات کے بارے میں، بوٹینیکل سپرے اور بائیو پسٹی سائیڈ ز کے استعمال بارے آ گاہی دینی ہے۔

ڈاکٹر محمد اشتیاق، اسسٹنٹ پروفیسر انٹو ما لوجی نے کپاس کے کیڑے مکوڑوں کی پہچان، نقصانات اور کنٹرول کرنے کے مختلف طریقوں کے حوالے سے آگہی دی۔ آ ئی پی ایم پر بات کرتے ہوئے بتایا کہ کیڑوں کے مختلف طریقہ انسداد کا عقلمند انہ استعمال آئی پی ایم کہلاتا ہے، اور اس کی بہت سی صورتیں یا اسٹریٹجيز ہو سکتی ہیں۔

اگر کوئی کہے کہ آئی پی ایم فیل ہو گئی تو میں اس بات کو نہیں مانتا کیونکہ اگر ایک اسٹریٹجی فیل ہو جائے تو اسٹریٹجی تبدیل کرنے کو عقلمند انہ استعمال کہیں گے جو کہ آئی پی ایم کی تعریف کے عین مطابق ہے۔

ڈاکٹر مقرب علی نے کپاس کی پیداواری ٹیکنالوجی کے بارے میں سیر حاصل گفتگو کی۔ جبکہ ڈاکٹر ارسلان خان لیکچرر پلانٹ پتھالو جی نے کپاس کی بیماریوں کی پہچان اور ان کے تدارک کے بارے میں بریف کیا۔

پروگرام کے آخر میں اللہ دتہ عابد ڈا ئیر یکٹر پلانٹ پرو ٹیکشن نے خطاب کیا اور اپنے فیلڈ کے تجربات شیئر کیے۔

اس موقع پر ڈاکٹر محکم حماد، ڈاکٹر عبد الغفار، ڈاکٹر عنصر نعیم اللہ، ڈاکٹر نعیم اقبال اور طلبہ و طالبات کی کثیر تعداد مو جو د تھی۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں