Breaking NewsNationalتازہ ترین

شہر ڈوب گیا ، واسا میں ایمرجنسی ہائی الرٹ

مون سون بارشوں کے حوالے سے واسا ملتان میں ایمرجنسی کا سلسلہ برقرار ہے ۔

جمعرات کی علی الصبح موسلادھار بارش کا سلسلہ شروع ہوتے ہی منیجنگ ڈائریکٹر واسا قیصر رضا نے واسا میں ہائی الرٹ جاری کر دیا، اور تمام سیوریج، ڈسپوزل اسٹیشن ڈویژنوں ایمرجنسی ڈیکلیئر کر کے افسران، سٹاف کو مشینری کے ہمراہ اپنی اپنی حدود میں بارش کے پانی کی نکاسی کے لئے متحرک ہونے کا حکم دیا گیا۔

طوفانی بارش کا سلسلہ تھمتے ہی منیجنگ ڈائریکٹر واسا نے شہر کے مختلف علاقوں اور ڈسپوزل اسٹیشنوں کا دورہ کرکے نکاسی آب کے انتظامات کا معائنہ کیا ، اور تمام ڈسپوزل اسٹیشنز کو فل کیپسٹی اور لوڈ شیڈنگ کے دوران جنریٹرز پر چلانے کا حکم دیا ۔

اس دوران سیوریج افسران کو ہائی الرٹ رہنے اور نکاسی آب کا آپریشن مکمل ہونے تک فیلڈ میں موجودگی کو یقینی بنانے کا حکم دیا۔

منیجنگ ڈائریکٹر واسا نے تمام روڈز،اہم شاہراہوں میٹرو روٹ سمیت نشیبی علاقوں سے بھی ہنگامی بنیادوں پر بارش کے پانی کی بروقت نکاسی کرنے کی ہدایت کی ۔

انہوں نے متعلقہ سیوریج سٹاف کو سڑکوں پر مین ہولز کورز ہٹانے، سکر مشینوں کے ذریعے پانی اٹھانے کی ہدایت کی۔

ڈپٹی ڈائریکٹر ڈسپوزل اسٹیشن نے اس دوران ایم ڈی واساکو بارش سے متعلق رپورٹ بھی پیش کی گئی۔

رپورٹ کے مطابق چونگی نمبر 9 ڈسپوزل اسٹیشن پر سب سے زیادہ 54 ملی میٹر، پرانا شجاع آباد روڈ پر 43 ملی میٹر، کڑی جمنداں ڈسپوزل اسٹیشن پر 45 ملی میٹر، سمیجہ آباد ڈسپوزل اسٹیشن پر 45 ملی میٹر بارش ریکارڈ کی گئی۔

ایم ڈی واسا نے شہری علاقوں سے بارش کے پانی کی نکاسی کے جاری آپریشن سے متعلق رپورٹ انتطامیہ کو بھی پیش کی۔

چونگی نمبر 9، پرانا شجاع آباد روڈ، سمیجہ آباد اور وہاڑی روڈ ڈسپوزل سٹیشنوں پر ایمرجنسی کاسلسلہ شام گئے تک جاری رہا۔

انہوں نے تمام ڈپٹی ڈائریکٹرز سیوریج کو اپنی اپنی حدود میں عیدالاضحیٰ کے حوالے سے قائم عارضی بکر منڈی پوائنٹس پر بھی بارش کے پانی کی نکاسی کرنے کی ہدایت کی تاکہ شہریوں کو قربانی کے جانوروں کی خریداری میں پریشانی کا سامنا نہ کرنا پڑے۔

ایم ڈی واسا کی ہدایت پر عارضی بکر منڈی پوائنٹس پر شہریوں کو پانی کی سہولت مہیا کرنے کے لیے چار واٹر باؤزرز گاڑیاں پہنچا دی گئی ہیں، جن کے ذریعے عید تعطیلات کے دوران شہریوں اور بیوپاریوں کو پینے کے پانی کی سہولت فراہم کی جائے گی ۔

Show More

Related Articles

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔

Back to top button

پاکستان میں کرونا وائرس کی صورت حال

گھر پر رہیں|محفوظ رہیں